یقیں کی آخری حد تک، مِلن کی خوش گمانی ہے

Zaib Nisa
=============
تمھیں دیکھا نہیں، جانا نہیں، پھر بھی یہ لگتا ہے
قبیلہ ایک ہے اپنا
وہی دردِ جُدائی ہے، وہی بھیگی ہوئی پلکیں
نصیبہ ایک ہے اپنا
کسی سے کچھ نہیں کہنا، کوئی شکوہ نہیں کرنا
قرینہ ایک ہے اپنا
کسی کی یاد سے، ویرانہِ دل جگمگا لینا
خزینہ ایک ہے اپنا
یقیں کی آخری حد تک، مِلن کی خوش گمانی ہے
نتیجہ ایک ہے اپنا..

Tumhen dekha nahi.jana nahi phir bhi ye lagta hai…….qabila aik hai apna..
Wohi dard e judayi hai wohi bheegi hui palken……Naseeba aik hai apna..
Kisi se kuch nahi kehna koi shikwah nahi krna……Qareena aik hai apna..
Kisi ki yaad se veerana e dil jagmaga lena…..khazeena aik hai apna..
Yaqeen ki aakhri had tak.milan ki khush gumani hai……Natija aik hai apna..
Na Maloom