سعودی عرب نے پسماندہ ممالک کے ذمے 6 ارب ڈالر کا قرضہ معاف کیا

سعودی عرب کی کابینہ نے پسماندہ ممالک کے ذمے واجب الادا مملکت کا چھے ارب ڈالرز کا قرضہ معاف کردیا ہے۔

سعودی کابینہ نے منگل کے روز ایک اجلاس میں اس فیصلے کی منظوری دی ہے۔سعودی پریس ایجنسی کے مطابق کابینہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ سعودی عرب اقوام متحدہ اور عالمی برادری کے ساتھ بنی نوع انسان کی بھلائی کے مقاصد اور سکیورٹی ، استحکام اور ترقی کے لیے اُمنگوں کو پورا کرنے کی غرض سے مکمل تعاون کی ضرورت پر زور دیتا ہے‘‘۔

سعودی کابینہ کا پسماندہ ممالک کے ذمے قرض معاف کرنے کا فیصلہ پائیدار ترقی کے منصوبے 2030ء کے مقاصد اور اہداف کے حصول کے لیے اقدامات کا تسلسل ہے۔ سعودی عرب کا یہ اقدام عالمی منظرنامے میں اس کے انسانی ، سیاسی اور معاشی کردار اور اسلامی اور بین الاقوامی ذمے داریوں کو پورا کرنے کا بھی مظہر ہے۔