پاکستان نےبھگوا دہشتگرد اسیمانند کو بری کئے جانے پر احتجاج درج کرایا

اسلام آباد، 20مارچ (یو این آئی) سمجھوتہ ایکسپریس دھماکہ معاملہ میں ہریانہ کے پنچکولہ کی ایک عدالت سے بدھ کو تمام ملزمین کو بری کئے جانے کے کچھ ہی گھنٹے بعد پاکستان نے اسلام میں آباد ہندستانی ہائی کمشنر اجے بساریا کو طلب کرکے اپنا احتجاج درج کرایا۔
پاکستانی وزارت خارجہ نے یہاں کہا کہ کارگزار خارجہ سکریٹری نے ہندستانی ہائی کمشنر کو طلب کیا اور 2007کے سمجھوتہ ایکسپریس دھماکہ معاملہ میں سوامی اسیمانند سمیت تمام چار ملزمین کو ہریانہ میں پنچکولہ کی قومی تفتیشی ایجنسی (این آئی اے) کی خصوصی عدالت سے بری کئے جانے پر احتجاج درج کرایا۔
پاکستانی وزارت خارجہ نے کہاکہ سمجھوتہ ایکسپریس دہشت گردانہ حملہ کے ملزمین کو گیارہ برس بعد بری کیا جانا انصاف کا ایک ’مذاق‘ ہے۔
این آئی ایس کے وکیل رنجن ملہوترا کے مطابق سوامی اسیمانند ، لوکیش شرما، کمل چوہان اور راجندر چودھری کو پنچکولہ کی خصوصی عدالت نے بری کردیا ۔ ہریانہ پولیس نے یہ معاملہ درج کیا تھا کہ جسے جولائی 2010میں این آئی اے کو منتقل کردیا گیا تھا۔
خیال رہے کہ 18فروری ، 2007 کو دہلی سے پاکستان کے لاہور جارہی سمجھوتہ ایکسپریس میں ہریانہ کے پانی پت کے نزدیک دھماکہ ہوا تھا جس میں 68لوگوں کی موت ہوگئی تھی اور 12لوگ زخمی ہوئے تھے۔ مرنے والوں اور زخمی ہونے والوں میں بیشتر پاکستانی شہری تھے۔ ان میں 16 بچے اور چار ریلوے کے ملازمین بھی شامل تھے۔