اردو خبریں خبر دنیاں

سعودی عرب : کروناوائرس کے پیش نظر متاثر ہونے والے کاروباری افراد کے حق میں اہم اپیل : 120 ارب ریال کا بجٹ مختص

ریاض: سعودی عرب میں مشرقی ریجن چیمبر آف کامرس کے سربراہ نے کروناوائرس کے پیش نظر متاثر ہونے والے کاروباری افراد کے حق میں اہم اپیل کردی۔

عرب میڈیا کی رپورٹ کے مطابق عبد الحکیم بن حمد العمار نے سرمایہ کاروں، شاپنگ مال اور دکان مالکان سے اپیل کی ہے کہ وہ دکانداروں کا دو مہینہ کا کرایہ معاف کردیں۔

ان کا کہنا تھا کہ مملکت میں کروناوائرس سے کاروبار کرنے والے افراد شدید متاثر ہورہے ہیں، ملک وائرس سے لڑنے کے لیے سب کو اپنا اپنا کردار ادا کرنا ہوگا، اسی ضمن میں درخواست کی جاتی ہے کہ مالکان دکانداروں کا دو مہینے کا کرایہ معاف کریں۔ خیال رہے کہ سعودی عرب میں بھی وائرس نے سخت پنجے گاڑ لیے ہیں۔

ملک میں کارباری مراکز، نجی اور سرکاری دفاتر بند ہونے کے باعث لاکھوں افراد متاثر ہورہے ہیں، پیسے نہ ہونے کے باعث دکاندار کرایہ دینے سے قاصر ہیں۔ مشرقی ریجن چیمبر آف کامرس کے سربراہ نے اسی نتاظر میں مذکورہ اپیل کی۔

خیال رہے کہ سعودی عرب میں کرونا وائرس کے پیش نظر 120 ارب ریال سے زائد کا بجٹ مختص کردیا گیا ہے جس پر اتوار سے عمل درآمد ہوگا۔ مملکت میں کروناوائرس سے لڑنے کے لیے ہرممکن اقدامات کیے جارہے ہیں۔

کرونا وائرس، سعودی عرب میں 120 ارب ریال کا بجٹ مختص

ریاض: سعودی عرب میں کرونا وائرس کے پیش نظر 120 ارب ریال سے زائد کا بجٹ مختص کردیا گیا جس پر اتوار سے عملدرآمد ہوگا۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی وزیر خزانہ محمد الجدعان نے کہا ہے کہ نجی اداروں خصوصاً چھوٹے اداروں اور اس وبا سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والی اقتصادی سرگرمیوں کی مدد کے لیے اسپیشل اسکیمیں تیار کی گئی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اسپیشل اسکیموں کا مجموعی بجٹ 70 ارب ریال سے زائد کا ہوگا، ان کے تحت نجی اداروں کو نقدی رقم فراہم کرنے کے لیے بعض سرکاری واجبات معاف کیے جائیں گے اور کئی کی ادائیگی ملتوی کردی جائے گی۔

وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ سعودی عریبین مانیٹر اتھارٹی (ساما) نے بینکوں، مالیاتی اداروں، چھوٹے اور درمیانے اداروں کے لیے ان دنوں پچاس ارب ریال کی سبسڈی کا پروگرام منظور کیا ہے

سعودی حکومت نے وزیر خزانہ کی زیر صدارت بااختیار کمیٹی تشکیل دی ہے، جو سہولتوں، ترغیبات اور قومی ترقیاتی فنڈ کی اسکیموں یا فنڈز اور بینکوں کے لیے فارمولے ترتیب دے گی۔

رپورٹ کے مطابق یہ کمیٹی کرونا وائرس سے ہونے والے نقصانات کی روشنی میں غیرمعمولی اقتصادی صورتحال کا دباؤ کم کرنے کے لیے خصوصی اقدامات کے فیصلے کرے گی، اس کمیٹی میں وزیر اقتصادی و منصوبہ بندی، وزیر تجارت، وزیر صنعت و معدنیات، قومی ترقیاتی فنڈ کے ڈپٹی چیئرمین اور قومی ترقیاتی فنڈ کے گورنر ممبر ہوں گے۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی زد میں دنیا کے بیشتر ممالک آچکے ہیں، اس کا تقاضا ہے کہ دنیا بھر کے ممالک جی 20 کے توسط سے مل کر موجودہ مرحلے سے نمٹنے کے لیے اقدامات اور نقصانات کا دائرہ محدود کرنے کی کوشش کریں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *