اردو خبریں خاص موضوع

آ ج ہم گناہ بخشوانے نکلے ہیں ۔۔۔ 😉😉😉😉

Zaara Mazhar _ chashma, pakistan
==========
آ ج ہم گناہ بخشوانے نکلے ہیں ۔۔۔ 😉😉😉😉

سوشل میڈیا پر نوری فرشتوں کی ایک جماعت بھی ایکٹو ہے جو بحکمِ خدا رہنمائی کے لئے آ پ پر نگران مقرر ہے ۔ آ پ سوشل میڈیا ایکٹیوسٹ ہیں تو غور سے سمجھ لیجئے اب آ پ کو اس کرۂ ہوائی پر فرشتہ بن کر رہنا ہے ۔ آ پ میں کوئی خاکی کمزوری نہیں ہونی چاہئیے ۔ آ پ کا اخلاق ، آ پکا کردار ،آ پکی گفتار ، آ پکی برداشت سب بلندی کے اعلٰی ترین مقام پر ہونے چاہئیں ۔۔ آ پ کا لباس عبایہ ہونا چاہیئے ورنہ اس پہ ایک پوری پوسٹ لکھ کر ڈھکی چھپی (آ پ کا نام لئیے بغیر ) تادیپ کی جائے گی ۔ حتیٰ کہ ہر وقت باوضو رہنا چاہئے ۔ ایک تسبیحِ ہزار دانہ آ پکے ہاتھ میں ہونی چاہئیے ۔ ہر بات کا جواب عربی آ یات و زباندانی و چھو منتر ہونا چاہئیے ۔ بے شک مخاطب جاہلِ مطلق کے سر سے گزر جائے ۔۔۔ اگر خاتون ہیں تو خود کو نیکو کار و پردہ دار ثابت کرنے کے لئیے آ ئیڈی پر کوئی چڑیا طوطا چپکا دیجئے یا آ پکی حیثیت کے مطابق رعایت دیتے ہوئے سر پہ اسکارف جمی فوٹو تک رعایت مل جاتی ہے ۔۔۔ کوئی جب چاہے جاہل قبائلی بدّو کی طرح آ پکے گلے میں گفتگو کے آ داب پسِ پشت ڈالتے ہوئے آپکی خاطر داشتی کر ڈالے آ پ ایک سرخ گال پر ہاتھ رکھ کر خندہ دہن و خندہ پیشان اپنا دوسرا گال پہ پیش کر دیجئے ۔۔۔۔ اس جماعت سے ہدایت لیجئے کہ آ پکی وال سے کیا شیئر ہونا چاہیئے ۔۔۔۔ ورنہ سوشل میڈیائی فرشتیوں کی وہ جماعت آ پ کو عرش سے دھکا دے دے گی ہٹ مردودہ تیرا یہ مقام نہیں ۔۔ یہ سب اس (کرۂ ہوائی )سوشل میڈیا پر ایکٹو رہنے کے لئیے شرائط ہیں ورنہ حقیقی دنیا میں لوگ ابھی بھی ایک عام خطا کار و عاصی انسان کی طرح ہی زندہ ہیں ۔۔۔ فرشتوں جیسی معراج تک نہیں پہنچے ۔ ایک دوسرے کے معاملات میں ٹانگ نہیں اڑاتے ۔ مرضی سے کھاتے پیتے ہیں ۔ کہیں سےاینٹ آ ئے تو بڑی سہولت و آ زادی سے پتھر سے خاطر داری فرما سکتے ہیں ۔

آ خر میں کہنا ہے کہ ہم عقلِ کُل کے دعوے داروں کو اتنی سی بات سمجھ نہیں آ تی کہ جس رب نے اس نوری مخلوق کو عزت سے نوازا ہے وہی کسی ناری کو بھی نواز سکتا ہے ۔ ہضم کرنا سیکھئے یہ میرے رب کی بخشی ہوئی عزت ہے ۔ کسی کو خاکِ راہ نہ جانئیے ورنہ خاکِ پا ہونے کے لیے تیار رہیے ۔ کہ غرور کا سر بری طرح روندا جاتا ہے ۔ آ ئندہ سے ان تمام اصولوں سے انحراف کرتے ہوئے ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ ہم فرشتے نہیں وہی گناہ گار انسان ہیں جو اشرف المخلوقات ہے اورصدیوں سے اس مادی زمین پر فزیکلی آ باد ہے چناچہ ۔۔۔۔
جائے گل ، گل باش و جائے خار ، خار ۔۔۔
امید ہے پوسٹ کے ردِ عمل کے طور پر آ ج ہم گناہ گار ناری کے گناہ دھوئے جا ئیں گے ۔۔۔
پیوستہ رہ شجر سے امید بہار رکھ ۔

Facebook Comments