اردو خبریں خاص موضوع

خدا ہماری ٹوپیوں کی رکھوالی کرے — تبسم فاطمه

Tabassum Fatima
=============
خدا ہماری ٹوپیوں کی رکھوالی کرے
— تبسم فاطمه
آگے ارطغرل کی گہری سرنگ تھی .
سرنگ کے اندر اندھیرے میں چمکتی ہوئی ایک تسبیح تھی جسے
بچپن میں نانی امان کے ہاتھوں میں دیکھا تھا /
اور جہاں سرنگ میں بہت سے اندھیرے کھلونے پڑے تھے
ہاں ، اندھیرے کھلونے
وہاں گول ، چپٹی ، نیی پرانی ٹوپیوں کا ایک ذخیرہ تھا
اور کوئی آواز تھی جو میں سن سکتی تھی
خدا ہماری ٹوپیوں کی رکھوالی کرے
خدا ہماری ٹوپیوں کی رکھوالی کرے
یہ آواز تین بار گونجی اور خاموش ہو گیی

سر کے اوپر ہجرت کے آسیب تھے
خلا میں جان دیتے ہوئے مزدور
ایک ماں تھی جس نے ایک بڑے سے پتھر پر
اپنی بیٹی کو لٹا رکھا تھا .
وہ پتھر کھینچ رہی تھی یا بیٹی کو
یہ کہنا مشکل
مگر وہ سات ہتھیلیوں کی آگ لے کر
مردہ منزلوں کی سمت بڑھ رہی تھی
ایسا مجھے بتایا گیا

سات ہتھیلیوں میں پانچ ہتھیلیوں پر
راکشس کی تصویر بنی ہوئی تھی
راکشس ، جو فرضی قصّے گڑھتا تھا
یا فرضی قصّوں میں آگ لگا کر
بستیوں کو جلتا ہوا دیکھا کرتا تھا
اس کا سب سے پیارا عشق ٹوپیوں سے تھا

خدا ہماری ٹوپیوں کی رکھوالی کرے
ارطغرل کی سرنگ میں جو زمزمہ خواں اور رقص کناں تھے
ان کے بارے میں بتایا گیا کہ وہ عشق میں تھے
جب انکے سر دھڑ سے الگ کیے گئے
ٹوپیاں اڑتی ہی ارطغرل کی سرنگ میں آ گییں /

جب ماچس کی تیلیاں سرخ برسات کر رہی تھیں
ٹوپیوں سے یہی نغمے پھوٹ رہے تھے
خدا ہماری ٹوپیوں کی رکھوالی کرے
اس بار یہ نہ ختم ہونے والی آواز تھی .
جلتی ہوئی تیلیوں کی برسات تھی /

Facebook Comments