اردو خبریں خاص موضوع

طالبان ایشیاء کی موجودہ سیاسی سرگرمیوں کا ‘مرکز’ ہیں : انڈیا_پاکستان جنگ کا میدان سج گیا ہے : رپورٹ

کرونا کے زمانے میں اور بھی بہت سے سنگین واقعات رونما ہوئے ہیں ، بہت سے بڑے خوفناک پروگرام جاری ہیں ، کسی کو اندازہ نہیں ہے کہ کورونا کی وبا کب ختم ہوگی ،

امریکہ کورونا کی وبا سے سب سے زیادہ متاثر ہے ، اس کے بعد یورپ میں اٹلی ، فرانس ، برطانیہ ، جرمنی وغیرہ شامل ہیں۔
عرب ممالک میں ، ایران اور ترکی کو اب تک نمایاں نقصان اٹھانا پڑا ہے ، ایشیاء کے ممالک میں چین سرفہرست ہے ، یہ بیماری چین سے شروع ہوئی ہے ، چین کے بعد اس کی اطلاع بھارت ، پاکستان ، ملائیشیا وغیرہ ممالک میں بھی سامنے آئی ہے۔ ہندوستان کے پڑوس میں نیپال ہے ، ابھی تک کوئی اموات نہیں ہوئی ہیں ، بنگلہ دیش میں کورونا کے بہت کم کیس رپورٹ ہوئے ہیں ، سری لنکا میں صرف 32 افراد کی موت ہوئی ہے اور کچھ 12 00 کل واقعات ہوئے

جنگ / جنگ کے بارے میں کورونا سے بات کرتے ہوئے ، دنیا تبدیلی کی طرف گامزن ہے ، نئے اتحاد قائم ہونے ہی والے ہیں ، بہت سارے ممالک کا نظام گر جائے گا ، آئین ، قانون باقی نہیں رہے گا ، لوگ مزید بنیاد پرست بن سکتے ہیں ، مذہب معاشرہ تشدد سے دور ہو جائے گا ، بہت سے ممالک میں لوگ اپنی طاقت سے نکل جائیں گے ، بڑے فسادات ، بھوک ، اغوا اور ڈکیتی میں بہت اضافہ ہوگا۔

امریکہ اور چین کے مابین کشیدگی پہلے ہی بڑھ چکی ہے ، امریکہ کورونا کے لئے چین پر الزامات عائد کررہا ہے ، چین نے امریکی الزامات کو مسترد کردیا ، کورونا امریکہ میں اب تک 80 ہزار کے قریب ہلاکتوں کا سبب بنا ہے۔ جب کہ وہاں 1.4 ملین افراد متاثر ہیں ، امریکہ کے پورے نظام کو ‘کورونا’ کے سامنے توڑ دیا گیا ہے ، ٹرمپ انتظامیہ نے اپنی تمام کوششیں کی ہیں لیکن کورونا ابھی بھی قابو سے باہر نہیں ہے ، امریکہ غصے سے ابل رہا ہے ، وہ چین کو سبق سکھانا چاہتا ہے ، اس کے لئے اس نے چین کا محاصرہ شروع کردیا ہے ، یہاں بھارت امریکہ کے لئے کام کرنے پر مجبور ہوگا ، امریکہ بحیرہ جنوبی چین میں اپنا جنگی ، بڑے بم سال طیارے تعینات کرتا ہے۔ کر رہا ہے ، بھارت اس وقت امریکی گروپ میں ہے ، امریکہ کو کوئینائن کی گولیوں کو بھڑکانے کے لئے بھارت کی ضرورت نہیں ہے یا پاکستان ، امریکہ نے بھارت کو چین کے خلاف استعمال کیا کوئی ہے، ساؤتھ چین سی میں امریکی کوشش ہوگی کہ وہ بھارت سے کام لے

بھارت کی توجہ پی او کے پر ہے ، امریکہ کی ضروریات سے ہٹ کر ، بھارت نے ہمیشہ پاکستان مقبوضہ کشمیر کو اپنا اٹوٹ انگ سمجھا ہے اور یہ پاکستان ، امریکہ ، تائیوان ، فلپائن ، ہانگ کانگ ، انڈونیشیا سے اپنا کشمیر واپس لینے کا بہترین موقع ہے۔ اور ہوسکتا ہے کہ ملائشیا کے ساتھ ہی ، جنوبی چین اسی وقت چین کے خلاف جنگ لڑے ، بھارت پی او کے پر عمل پیرا ہو اور کشمیر کو واپس لینے کے لئے کارروائی کرسکتا ہے۔ ہاں ، اس طرح چین کو دو طرف سے گھیر لیا جائے گا

اس صورتحال میں یہ جنگ خوفناک شکل اختیار کر سکتی ہے ، عالمی جنگ 3 ہوسکتی ہے ، پی او کے میں چین کا منصوبہ چل رہا ہے ، اور چین پاکستان کا مشترکہ پروگرام ہے جس کا سلامتی معاہدہ پاکستان اور چین کے مابین ہے ،

ماضی میں کشمیر میں بہت سراپا احتجاج رہا ہے ، ایک طرف تو فوجی اور دہشت گردوں کے محاذ بڑھ رہے ہیں ، دوسری طرف سرحد پر دونوں ممالک کی طرف سے بھاری فائرنگ کی جارہی ہے ، اس کے علاوہ دونوں ممالک نے سرحد کے قریب ہی بھاری ہتھیاروں ، لڑاکا طیاروں کو تعینات کیا ہے۔ ذرائع اور میڈیا رپورٹس کے مطابق ، ہندوستان نے بوفورس بندوق کو سرحد کے محاذوں پر تعینات کیا ہے ، سکھوئی کو 30 محاذوں پر تعینات کیا گیا ہے ،

پاکستان نے سرحدی علاقوں میں بڑی تعداد میں جے 13 لڑاکا طیارے تعینات کردیئے ہیں ، دوسری جانب امریکہ جلد سے جلد افغانستان فرار ہونے کے لئے تیار ہے ، امریکی خصوصی ایلچی پاکستان کے ساتھ مزید معاملات کے لئے طالبان کے ساتھ ہوں گے اور مشاورت ہندوستان

طالبان ایشیاء میں موجودہ سیاسی سرگرمیوں کا ‘مرکز’ ہیں ، ذرائع کے مطابق ، بھارت اشرف غنی اور عبداللہ عبد اللہ کے مابین تصفیہ کرکے افغانستان میں اپنے لئے زمین بچانے کی کوشش کر رہا ہے ، جبکہ پاکستان ‘طالبان’ کے ساتھ مل کر بھارت کو افغانستان سے بے دخل کرنے کے لئے کوشش کر رہا ہے ، پاکستان کا خیال ہے کہ افغانستان میں را کے بہت سے دفاتر موجود ہیں ، جہاں سے یہ بلوچستان اور دوسرے پاکستان جائیں گے نی علاقوں میں کارروائیوں کو انجام دیتا ہے

اس وقت میڈیا ، سوشل میڈیا میں مظفرآباد ، گلگت ، بلتستان کے بارے میں بہت ساری پوسٹیں ، تبصرے ، خبریں آرہی ہیں ، ذرائع کے مطابق ، بھارتی حکومت نے کشمیر کے قبضہ میں آنے والے کشمیر ، جنگ کی صورت میں ، طالبان کو آزاد کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اور روس کا کردار فیصلہ کن ہوگا ، روس چین کے ساتھ جائے گا ، طالبان پاکستان کے ساتھ کھڑے ہوں گے ، ایران ، ترکی پاکستان کے ساتھ نظر آئیں گے جبکہ سعودی عرب ، متحدہ عرب امارات ، قطر ، ایم رہنمائی کے کردار میں ہوں گے ، یورپی ممالک سے فرانس ، برطانیہ جنوبی چین بحیرہ اسود میں امریکہ کے ساتھ تعاون کرے گا ، اسرائیل اپنا کردار ادا کرے گا ، اسرائیل امریکہ اور بھارت کے ساتھ ہے ، اسرائیل کے ماڈل پر بھارت کے اندر بہت سے پروگرام چل رہے ہیں ، جنگ کی صورت میں اسرائیل خلا ، انٹرنیٹ ، ٹکنالوجی کے ذریعہ کام کرے گا

یہودی اپنی سازشوں ، چالوں اور تفرقہ بازی کی کارروائیوں سے باز نہیں آئے ، ،

یہودیوں کے بارہ قبیلے جنھیں فلسطین / کنعان کی سرزمین سے نکالا گیا تھا وہ سب سفید / سفید تھے ، یہ سفید فام لوگ یہودی ‘آریائی’ ہیں ، آریائی نسل کے لوگ اپنے آپ کو اس زمین کا اصل مالک سمجھتے ہیں ، انہیں یقین ہے کہ صرف ‘آریان’ نسل ہی حکومت کر سکتی ہے اور یہ ان کا حق ہے ،
ہندوستان میں 90 فیصد لوگ غیر ملکی نسل کے ہیں ، بیرونی ہیں ، افریقہ ، وسطی ایشیاء ، یورپ ، چین ، افغانستان ، وغیرہ سے ہیں۔ پہلے ، ڈریوڈ کو ہندوستانی باشندہ سمجھا جاتا تھا لیکن بعد میں معلوم ہوا کہ ڈریوڈ کا تعلق افغانستان سے ہ

کول ، بھیل / مچیل / ادیواسی / وانوسی / دلت کی کچھ ذاتیں ہیں ، جو ہندوستان سے تعلق رکھتی ہیں ،
ہندی بولنے والے ہندوستان میں سارے ‘دیوتا’ راجپوت ہیں جبکہ شمالی ہندوستان اور جنوبی ہندوستان کے ‘لارڈ’ برہمن بھی ، سمجھتے ہیں ، کیوں ، ہندی بولنے والے ہندوستان کے لارڈ راجپوت ہیں ، ، راجستھان / راجپوتانا ، گجرات / کچ ، وسطی ہندوستان (اترپردیش ، مدھیہ پردیش) میں راجپوتوں کی ایک بڑی تعداد ، راجپوت اقتدار پر حکومت کرتے تھے ، جاگیردار ، جاگیردار ، راج ، مہاراجہ صرف راجپوت تھے ، اب اگر پنڈت جی کا مطلب خود ہوتا۔ اور اگر اس علاقے میں کائنات کو خدا کی حیثیت سے پیش کیا جائے تو ، ٹھاکر صاحب کی ‘لٹہ’ جو ، راجہ ، راجپوت اور اس کے خدا کو ایک اور بڑے نے مار ڈالی تھی ، ، ہوشیار ، پنڈت جی نے ‘راجپوت’ کو خدا بنایا تھا۔ اور وہ خود جیجمن بنے ، کنور صاحب کو اس مسودہ پر کوئی اعتراض نہیں تھا ، پنڈت جی کو اس کا فائدہ ہوا ، کہ جن سے پنڈت جی کو چندہ دہشینہ نہیں ملا ، وہ ٹھاکر صاحب کو ‘یہاں اور وہاں’ ملا اسے لپیٹ دو انہوں نے کہا کہ ‘حکم’ آپ کے سلسلے میں ایک توہین آمیز چیز ہے ، پھر کیا تھا ، ، ​​ٹھاکر صاحب لتھیت کے پاس جاتے تھے ، اس کے ، لارڈ اور جیجمن دونوں خوش تھے ، ،

یہودی قبائل جو ملک کو بے دخل کرنے کے اہل تھے ان میں ‘برہمن’ بھی شامل ہیں اور ان میں بہت سے سلطان ، شہزادے ، بادشاہ ، عرب گھروں کے لوگ ہیں ، افغانستان میں گذشتہ پانچ سالوں میں 300 یہودی مکانات کی مرمت کی گئی ہے ، کیوں؟ “وہاں بہت کم یہودی موجود ہیں ، اور ایران کے اندر ہزاروں یہودی عبادتیں دوبارہ رنگ لگی ہیں ، کیوں؟ ایران میں پارلیمنٹ میں یہودیوں کی نمائندگی کی جاتی ہے ، پارلیمانی کمیٹیوں میں یہودی شامل ہیں ، بہت کم لوگ جانتے ہوں گے کہ صدام حسین کے زمانے میں عراق کے وزیر اعظم رہنے والے طارق عزیز یہودی تھے ،

 
‘آریہ’ کا خون اس کی پاکیزگی کو ترجیح دیتا ہے ، یہ دنیا کے دوسرے لوگوں کو جانوروں کی طرح سمجھتا ہے ، ، ، ہٹلر ، ٹرمپ ، یونین کے سربراہ ، برینٹن ترنٹ ، ، جو پروگرام وہ چلا رہے ہیں وہ ایک مشترکہ پروگرام ہے۔ ، جب ذہن کے مریضوں کو معاشرے میں ‘پھل پھول’ بناتے ہیں اور وہ ایسے لوگوں کے طور پر پائے جاتے ہیں جو اپنا مثالی ‘بد سلوک’ کرتے ہیں ، ،

خون اور فطرت ،،،، کچھ چیزوں پر مشتمل ہے ،،،،، منتخب کرکے / قتل کرکے بدلہ لینا، کیا کرو جس کی فطرت بھی شامل ہے

… “” میں ،،،، تمہیں روزانہ مجھے کھونا پڑتا ہے
،،،،،،، کہ آپ آزاد محسوس کرتے ہیں واقعی آپ کو محسوس کریں
.. روحوں کی زبان غلطیاں نہیں کرتی ہے
…… ، ”آپ ، میری زندہ باد ، ، ایک ساتھ مریں
،،،، جندگی ،،،،، دریا کے دو کنارے ،،،، چلیں ،،، دور دور ،،، ایک ساتھ رہنا
،،،، میری سب کچھ آپ کے ساتھ ہے
،،،، تمہارا میرا، میرا تمہارا، سفر ہے
،،،، دریا، ساحل توڑ ،،،، جب بہتا ہے
، ، ، پھر پھولوں میں ، میں اور آپ
، ، دونوں کھو گئے ہیں
،،،، بہہ چکے ہیں
،،،، حاصل کریں
،،،،،
سمندر بن
،،،، ہم اس دن غائب ہوگئے
،،،،، بحیرہ، سمندر باقی، ،،،
پرویز خان
اس لمحے….
پانی کے بلبلے….
بلبلوں سے بھرا ہوا…
… .یہ بلبلو پکے ، جلائے گئے ، گھوم رہے ہیں ، جھگڑے ہوئے ہیں
…. زندگی… .. ، خوابوں میں گھل جاتی ہے …….
رنگ میں ان بلبلوں کا مذاق… ..
اب ہارنا… .. زندگی
… .. بلبو سی….
کوئی غلطی ہے… ..
پرویز خا

وضاحت کریں کہ پلوامہ کے بعد ، جب ہندوستان نے بالاکوٹ کے دہشت گردوں کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ، یہاں تک کہ اسرائیل اور فرانس کے ماہرین بھی راجستھان اور گوالیار کے فضائی اڈے پر موجود تھے ، نہ صرف 27 فروری کو جب پاکستان نے ہندوستان کے خلاف فضائی حملہ کیا۔ جس میں کلبھوشن کو پاکستانی فوج نے پکڑا تھا ، اس وقت ابتدائی بیانات میں پاکستان میڈیا اور پاک فوج نے دو ہندوستانی طیارے اور دو پائلٹ گرا دیئے تھے۔ اس کیچ کی اطلاعات تھیں لیکن بعد میں صرف سلام کی بات کی گئی ، ماہرین اور میڈیا رپورٹس کے مطابق ، دوسرا پائلٹ جو پاکستان میں پکڑا گیا تھا وہ اسرائیل کا تھا اور طیارہ سکھوئی 30 تھا جسے پاک فضائیہ نے گرا دیا تھا۔
ذرائع کے مطابق چین کے کہنے پر پاکستان نے اسرائیلیوں کے پائلٹوں کے ہاتھوں پکڑے جانے کو معمول بنا نہیں رکھا ، اسی وجہ سے روس کے سخوئی کی خبر کو بھی عام کرنا پڑا ، پاکستان نے اس خبر کو چھپا لیا تھا ، یقین ہے کہ چین کو فائدہ ہوا ہے ، اس سے پاکستان کو فائدہ ہوگا جس طرح روس نے وقت پر پاکستان کو انتہائی ‘خفیہ معلومات’ دینے کے لئے انتباہ کیا تھا ، واقعہ بھی ایسا ہی ہے کہ وزیر اعظم کی زیر صدارت بھارت میں پاکستان کے فضائی حملے کے بعد پی ایم او میں ایک انتہائی خفیہ ملاقات ہوئی ، جس میں صرف وزیر اعظم ، این ایس اے اور تینوں فوجوں کے سربراہ شامل تھے ، جس میں یہ تیار تھا کہ بھارت پاکستان کے اندر 6 اہداف پر میزائل حملہ کرے گا ، اجلاس ختم ہونے کے بعد اجلاس میں شامل افراد پی ایم او سے باہر ہوگئے۔ یہاں تک نہیں نکلا کہ پاکستان کے این ایس اے کا فون ہندوستان کے این ایس اے کے فون پر آیا ، پاکستان سے ہندوستان میں ملاقات اور پاکستان میں 6 مقامات پر حملے کے بارے میں بات اے ہوئے دھمکی دی کہ اگر بھارت نے پاکستان پر حملہ کیا تو ہم بیس مقامات پر بھارت کے اندر حملہ کریں گے
یہ وہ معاملہ تھا جو انتہائی خفیہ تھا ، یہ خبر کیسے افشاء ہوئی ، یہ پریشان کن ہندوستان ، ذرائع کے مطابق ، یہ خبر سیٹیلائٹ کے توسط سے حاصل کی گئی ، جس کا پتہ لگانے کے بعد چین کا اغوا کیا گیا ، چین یہ خفیہ معلومات روس کو دی گئیں ، جو روس نے پاکستان کو دی ، چین نے براہ راست یہ خبر پاکستان کو فراہم نہیں کی ، خیال کیا جاتا ہے کہ چین دنیا کے کسی بھی تنازعہ میں ملوث نہیں ہے۔ چاہتا تھا، پاکستان اور بھارت دونوں ہی چین کے پڑوسی ملک ہیں، اس لئے اس نے یہاں بہت احتیاط سے کام لیا
آئندہ کشمیر میں کیا ہوگا ، ابھی کچھ نہیں کہا جا

 

translated by google,  their may be many spelling mistakes, i can say ‘darguzar karein’,,,,sorry, parvez khan

 

Israel playing major role in India-Pakistan conflict : UK Analyst

A prominent British columnist has argued that Israel’s warming relations with India has contributed to the escalating tensions between India and Pakistan amid fears of an all-out conflict between the two nuclear-armed rivals.

Robert Fisk, the senior analyst writing for The Independent, said in an article on Thursday that Israel was desperately seeking to capitalize on the anti-Muslim sentiment among the Hindu nationalists in India to sell more arms and weapons to New Delhi.
Fisk said the recent escalation between India and Pakistan is in fact a product of growing Israeli influence in New Delhi, saying Israel’s fingerprints are visible all over the conflict.

India launched airstrikes on Pakistani positions earlier this week after 40 of its troops were killed in a militant attack in the Indian-controlled Kashmir region.

The conflict has enjoyed an extensive coverage by the media in the UK, a country home to some 1.4 million people with Indian origin and a community of 1.2 million British Pakistanis.
Fisk said the Indian army’s use of Israeli-made Rafael Spice-2000 “smart bombs” in its attack on militant positions inside Pakistan was a clear proof that the regime in the occupied Palestinian territories was benefiting from the conflict.
“Well, don’t let the idea fade away. Two thousand five hundred miles separate the Israeli ministry of defense in Tel Aviv from the Indian ministry of defense in New Delhi,” wrote Fisk in his commentary, adding, “but there’s a reason why the usual cliché-stricken agency dispatches sound so similar.”

Fisk, an award-winning journalist and writer, said that Israel was trying to capitalize on the growing power of the right-wing nationalist government of Indian Prime Minister Narendra Modi by pretending that the two governments are both under attacks by Muslims.
Fisk said India was Israel’s largest arms client in 2017, paying £530m ($700 million) for Israeli air defense. He said Israel ensured the Indian government about the lethal force of its weapons by providing evidences of their use in Palestine and in Syria.
The standoff between the two neighboring countries has escalated dramatically since February 14, when Indian paramilitary forces on the New Delhi-controlled side of Kashmir were hit by a deadly bomb attack orchestrated by Pakistan-based militants.
The tensions reached a peak on Tuesday, when India said it had conducted “preemptive” airstrikes against what it described as a militant training camp in Pakistan’s Balakot.

Both Islamabad and New Delhi have also claimed to have shot down each other’s fighter planes near the disputed border of Kashmir, accusing one another of violating each other’s airspace.
Kashmir has been split between India and Pakistan since partition in 1947. Both countries claim all of Kashmir and have fought three wars over the territory.
Indian troops are in constant clashes with armed groups seeking Kashmir’s independence or its merger with Pakistan.
India regularly accuses Pakistan of arming and training militants and allowing them across the restive frontier in an attempt to launch attacks. Pakistan strongly denies the allegation.
— presstv.com

Major Gaurav Arya (Retd)
@majorgauravarya
All these Pakistanis on Twitter who advocate Jihad in Kashmir and call it “freedom struggle” neither have the guts to fight, nor do they have the conviction to send their father, brother or son to Kashmir.

Cowardice & hypocrisy…a unique cocktail, served only in Pakistan Clinking glasses
Major Gaurav Arya (Retd)
@majorgauravarya
Iman, Taqwa, Jihad fi-Sabilillah is the motto of Pakistan Army.
Yet, not a single senior officer of Pak Army has sent his son to fight Jihad in Kashmir in 30 years. Instead, they send their sons to study in US & Europe.
Jihad is for poor Pakistanis.


Security forces on red alert over terror bombing threat in Kashmir

Terror group Jaish-e-Mohammed is likely to use local Kashmiris for the plan to bomb security personnel deployed in Jammu and Kashmit to fight terror

May 11,
Shishir Gupta
Hindustan Times
New Delhi

Security forces in Jammu and Kashmir have been placed on red alert over the plans of Pakistan-backed terror group Jaish-e-Mohammed to carry out attacks targeting army and paramilitary forces on Monday. Security forces expect the terrorists to carry out the attack using a car bomb or a suicide bomber.

The heightened security in Kashmir coincides with the terror group Hizbul Mujahideen naming Ghazi Haider aka Saifullah Mir as the next chief chief of the terror group in Kashmir to replace Riyaz Naikoo who was killed in an encounter this week.
“Ghazi Haider is a nom de guerre. Ghazi means Islamic warrior, Haider is brave,” a security official in Kashmir said, adding that operations to locate the new Hizbul chief would begin soon. The terror outfit has also readied its second line of leadership. Ghazi Haider would have a deputy, Zafar ul Islam, and a chief military adviser Abu Tariq Bhai.

For now, the immediate priority of the security forces is to neutralise the Jaish-e-Mohammed threat to convoys of security forces on May 11. The terrorist group has been planning the possible attacks on Monday for days. Last week, according to intelligence reports, Mufti Abdul Rauf Asghar, the de facto chief of Jaish, had met his handlers at Pakistan military’s Inter Services Intelligence.

Security officials said the choice of May 11 for an attack coincides with the 17th day of Ramadan when the Battle of Badr was fought and won by a few hundred soldiers in Saudi Arabia. In Islamic history, it is seen as a huge victory in the early days of Islam and a turning point.


It is also the 22nd anniversary of India’s second round of Pokhran nuclear tests in 1998 when India became a nuclear weapons state with a capability to deliver airborne and land-based nuclear devices.

The Jaish-e-Mohammed, which has a large proportion of foreign terrorists in its ranks, is expected to use local Kashmiris for the bombing as it had done in the Pulwama car bombing last year that targeted a convoy of CRPF troopers.

This lowers the cost of a terrorist attack for Pakistan-based terror groups, a Kashmir police officer said. It is also convenient because it helps its backers in Pakistan claim that the attack was carried out by local Kashmiris and is part of, as Prime Minister Imran Khan calls it, an indigenous resistance movement.

Counter-terror officials in North Block said the Northern Army commander and chiefs of Central Reserve Police Force and Jammu and Kashmir police’s special operations groups had already been sensitised about the possible attack.
As a precaution, all movement of convoys has been placed under strong monitoring and will move out under strong protection with road opening parties in accordance with procedures. This will keep everyone safe, an official said.

Major Gaurav Arya (Retd)
@majorgauravarya
Whenever there is a military coup in Pakistan,
@RadioPakistan
& Pakistan TV start playing Madam Noor Jahan’s songs.
It’s a similar story in India. Whenever we take over a territory, we start by giving weather updates of that area. We did the same for Dhaka in 1971.

Mehr Tarar
@MehrTarar
Try to give weather forecasts of the places where millions of your compatriots have been forced to be on roads, left helpless, penniless, hopeless by your great govt, and THEN focus on Mirpur, Muzzaffabad & Gilgit. Feel free to add Skardu too.

Aishwarya Kapoor
@aishkapoor
Shaam 7baje #PuchtaHaiBharat mein #pakistan ke udd Gaye hain hosh.handwara mein @adgpi ke action ke baad @ImranKhanPTI baukhla raha hai ..lekin #pak ho ya #china :f-16 plane ho ya cheeni sipahi humari fauj mun Tod jawab dene ko tyaar hai with @majorgauravarya @Republic_Bharat

Major Gaurav Arya (Retd)
@majorgauravarya
The Resistance Front (TRF) is a false front for terror groups in Kashmir. Currently all terror groups have names like Lashkar-e-Toiba & Jaish-e-Mohammad etc.
TRF is a name that Western media will understand & empathise with. ISI is attempting to “secularise” terror in Kashmir.

Major Gaurav Arya (Retd)
@majorgauravarya
I have Imran for breakfast and Bajwa for lunch. You can be my dinner because I like to keep it light.
Not just abroad, I also have the phone numbers of Bugti, Mengal & Marri in Balochistan. Baat karaoon aapki?
If you ever need a visa to go to Dera Bugti, let me know.

Major Gaurav Arya (Retd)
@majorgauravarya
Press Release of the BALOCH LIBERATION ARMY (BLA) about the operation they carried out against Pakistan Army yesterday.
BLA says that’s its primary aim is to establish a free and independent Balochistan and protect the Baloch people.

Hamid Mir
@HamidMirPAK
It was an open threat made by Major Rtd Gaurav Arya on Indian channel Republic TV two days ago he predicted an attack on Pakistani forces in Baluchistan in 10-15 days and today there was an attack on Pakistani forces near Iranian border Pakistan must take up the issue with @UN

Major Gaurav Arya (Retd)
@majorgauravarya
Hezbollah is a terrorist organisation & Iran is delusional. What consequences will Germany face? What can Iran do? Never threaten unless you have the intention & capability of carrying out your threat.
Iran, what’s the price of crude oil today?


Major Gaurav Arya (Retd)
@majorgauravarya
Apparently, the Government of Pakistan cannot “find” sanctioned terrorists, and hence, has asked UNSC to remove their names from the list.
Off course they can’t find them. That’s because the Pak Army is hiding them. Check with GHQ, Rawalpindi.

Aditya Raj Kaul
@AdityaRajKaul
Security forces are on a high alert in Jammu & Kashmir. Intel inputs had earlier revealed plans of Pakistani terror group Jaish-e-Muhammad to carry out Fidayeen/Suicide terror attack against Army/Paramilitary on May 11. Heightened vigil being kept across the Union Territory.

Aditya Raj Kaul
@AdityaRajKaul
Top Indian Govt Sources tell me, Pakistan has failed to control cross-border infiltration under pressure of Jihadi leaders of Jaish, Lashkar and Hizbul. Security top brass inputs indicate Pakistan desperate to push in terrorists in Kashmir over next few weeks of May/June 2020.

Ritika Chaudhary
@RitikaaChaudhry
After Solving Kashmir Issue The Next Target Of Modi And Team Is POK #हमारा_POK_वापस_करो

Facebook Comments